Uncategorized

Hum TV Drama Parizaad OST Lyrics

Parizaad OST Lyrics from Geo TV new Drama Pakistani song sung by Asrar and this latest song is featuring Ahmed Ali Akbar, Saboor Aly, Yumna Zaidi. Parizaad song lyrics are penned down by Hashim Nadeem Khan while music is given by Waqar Ali and the video has been directed by Shahzad Kashmiri.

Check This Article If You Want To Download Parizaad OST Mp3

Parizaad OST Lyrics
Parizaad OST Lyrics

Parizaad OST Song – FAQS

Who Sung Parizaad OST Song? Asrar
Who Composed Music Of Parizaad OST? Waqar Ali
Who Penned Lyrics Of Parizaad OST? Hashim Nadeem Khan
Who Featuring Parizaad OST? Ahmed Ali Akbar, Saboor Aly, Yumna Zaidi
When Parizaad OST Song Released? Jun 23, 2021

Parizaad OST Lyrics

Husan Ka Jazeeroon Mian
Rooap Kay Kinaron Parr
Rashmi Andhray Hain
Surmai Ujalay Hain

Ek Naz Afreen Dil Parr
Qabza Jamae Bethii Hai
Jisko Jheel Ankhon Main
Do Neel Gun Sey Pialay Hain

Na Pooch Parizaadon Say
Yeah Hijer Kasy Jhela Hai
Yeah Tan Badan To Chalnii Hai
Aur Roh Par Bhi Chll ay Hain

Kasay Jan Pao Gey
Ishq Main Kya Guzree Hai
Kitne Zakham Khae Hain
Kitne Dard Paley Hain

Saiyan way, Saiyan way
Saiyan way, Saiyan way

Kwahishon Key Jangal Main
Hastraton Key Bistar Par

Jisam To Gulabi Hain
Aur Dil Say Kalay Hain

Main Rooap Ka Pujari Hoon
Main Lafaz Ka Bikari Hoon
Lakin Jahaan Main Basta Hoon
Wahan Mandiron Pey Tare Hainn

Kyaa Ishq Who Nibhaen Gey
Kyaa Husan Ko Sarahain Gey

Tareek Jinkay Chehraay Hain
Muqadar Unkay Jagaay Hain

Dushmano Sey Kya Shikwa
Kya Gilaa Raqeebon Sey
Yeah Sanp Astino Main
Hum Ney Khud Hi Palay hain

Na Pooch Parizaadon Say
Yeah Hijer Kasy Jhela Hai
Yeah Tan Badan To Chalnii Hai
Aur Roh Par Bhi Chll ay Hain

Kasay Jan Pao Gey
Ishq Main Kya Guzree Hai
Kitne Zakham Khae Hain
Kitne Dard Paley Hain

Parizaad OST Song Lyrics In Urdu

حُسن کے جزیروں میں روپ کے کناروں پر
ریشمی اندھیرے ہیں، سُرمئی اُجالے ہیں

ایک ناز آفریں دل پر قبضہ جمائی بیٹھی ہے
جس کی جھیل آنکھوں میں دو نیل بوں سے پیالے ہیں

نا پوچھ پری زاروں سے یہ ہجر کیسے جھیلہ ہے
یہ تن بدن تو چھلنی ہے اور روح پر بھی چھالے ہیں

کیسے جان پاؤں گے؟ عشق میں کیا گُزری ہے؟
کتنے زخم کھائے ہیں؟ کتنے درد پالے ہیں؟

سائیاں وے، سائیاں وے، سائیاں وے

خواہشوں کے جنگل میں حسرتوں کے بستر پر
جسم تو گلابی ہیں اور دل سے کالے ہیں

میں روپ کا پُجاری ہوں، میں لمس کا بھکاری ہوں
لیکن جہاں میں بستاں ہوں وہاں مندروں پہ تالے ہیں

کیا عشق وہ نبھائیں گے؟ کیا حسن کو وہ سراہے گے؟
تاریک جن کے چہرے ہیں مُقدروں پہ جالے ہیں

دشمنوں سے کیا شکوہ؟ کیا گلہ رقیبوں سے؟
یہ سانپ آستینوں میں ہم نے خود ہی پالے ہیں

نا پوچھ پری زاروں سے یہ ہجر کیسے جھیلہ ہے
یہ تن بدن تو چھلنی ہے اور روح پر بھی چھالے ہیں

کیسے جان پاؤں گے؟ عشق میں کیا گُزری ہے؟
کتنے زخم کھائے ہیں؟ کتنے درد پالے ہیں؟

Anum Fatima

I am Anum Fatima. I Have Done My Master's Degree in Mass Communication. I Am also interested in Media and news writing. I Have worked as a Content Writing intern in Pvt Software House. Working as an editor and a writer at Ostpk.com.

Related Articles

Back to top button